نصیرآباد اور ڈیرہ بگٹی میں خواتین اور بچوں کا اغواء بلوچ قوم کی عزتِ نفس پر حملہ ہے۔بی آر ایس او


کوہٹہ  بلوچ ریپبلکن اسٹوڈنٹس آرگناہزیشن کے آرگنائزنگ باڑی کے ترجمان نے پانچ دنوں سے ڈیرہ بگٹی اور نصیر آباد میں جاری فوجی آپریشن میں خواتین اور بچوں کے اغواء کے واقعات کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اسے بلوچ قوم کے عزتِ نفس پر حملہ قرار دیا۔ترجمان نے کہا ہےکہ بلوچ معاشرے میں خواتین کو اعلٰی مقام حاصل ہے، سالوں سے جاری قبائلی تنازعات میں بھی خواتین اور بچوں کو استثنٰی حاصل ہے لیکن اسلام کے دعویدار پاکستانی افواج کی جانب سے بلوچ خواتین پر حملہ کرنا،خواتین اور بچوں کو اغواء و شہید کرنا اسلام سمیت کوئی بھی مذہب اس طرح کے درندگی کی اجازت نہیں دیتا۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ نصیرآباد کے علاقےچھتر میں پاکستانی افواج نے حملہ کرتے ہوئے متعدد لوگوں کو اغواء کیا ہے جن میں سے کچھ کی شناخت بانو زوجہ بگٹی، دربخت زوجہ کفیل بگٹی، گل خاتون دختر بمبور بگٹی، فاطمہ دختر بمبور بگٹی، گراناز دختر بمبور بگٹی،سوبا ولد کفیل بگٹی، حاجران دختر مہران بگٹی، شہزادی دختر بمبور بگٹی، شاہ زین بی بی زوجہ فضل محمد بگٹی، نازل بی بی زوجہ فضل محمد بگٹی، ستااللہ ولد فضل محمد بگٹی، جان بی بی دختر فضل محمد بگٹی، شاری دختر فضل محمد بگٹی، مہرو زوجہ میر ہزار بگٹی، گران بی بی دختر میر ہزار بگٹی، سونی زوجہ بوجو بگٹی، قدیر ولد بوجو بگٹی، قمرالدین ولد بوجو بگٹی، گل زادی دختر بوجو بگٹی، امیر دین ولد بوجو بگٹی، غیمو زوجہ نظر محمد بگٹی، ماہا بی بی دختر نظر محمد بگٹی، سودا ولد نظر محمد بگٹی، ناز خاتونزوجہ چاکر بگٹی، روز بی بی دختر چاکر بگٹی، تین سالہ حمید ولد چاکر بگٹی سے ہوگئی ہے۔جبکہ ایک اور افسوس ناک واقعے میں سوئی کے علاقے شاری دربار میں پاکستانی افواج نے فائرنگ کرتے ہوئے ایک خاتون کو اسکے بچے سمیت شہید کردیا۔

ترجمان کا مزید کہنا تھا کہ بلوچستان بھر میں لوگوں کو اغواء اور شہید کرنے کا سلسلہ تسلسل کے ساتھ جاری ہے، پاکستانی خفیہ ادارے اور افواج انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں کر رہے ہیں لیکن ان تمام تر معاملات میں بین القوامی میڈیا سمیت انسانی حقوق کے ادارے اور سول سوسائٹی مکمل خاموشی اختیار کیے ہوئے ہیں جس کی وجہ سے پاکستانی افواج بے خوف ہوکر لوگوں کو اغواء و شہید کر رہے ہیں۔

Comments

Popular posts from this blog

میں اسلم کے عہد میں جی رہا ہوں تحریر : مجیدبریگیڈ سلمان حمل