بلوچی زبان کے نامور شاعر استاد حیات شوکت جہان فانی سے کوچ کر گئے۔

تربت بلوچی زبان کے مایہ ناز بزرگ شاعر استاد حیات شوکت جہان فانی سے کوچ کرگئے۔ نماز جنازہ و تدفین سنگانی سر میں ادا کردی گئی۔ بلوچ زبان کے مایہ ناز بزرگ شاعر اور بلوچستان اکیڈمی کے بانی رکن استاد حیات شوکت طویل علالت کے باعث جمعرات کو جہان فانی سے کوچ کرگئے ۔ انہیں بدھ کی شام گئے سنگانی سر میں نماز جنازہ کے بعد آبائی قبرستان میں سپرد خاک کردیاگیا ۔ نماز جنازہ و تدفین میں شعراء و ادباء سمیت سیاسی وسماجی رہنماؤں نے کثیر تعداد میں شرکت کی ۔ دریں اثناء معروف ادیب و شاعر ،ناول نگار پروفیسر غنی پرواز ،تربت پریس کلب کے صدر حافظ صلاح الدین سلفی، نائب صدر اسد بلوچ، سنیئر صحافی و سابق صدر پھلان خان، ارشاد اختر ، بلوچستان اکیڈمی کے چیئرمین ارشاد پرواز، وائس چیئرمین مقبول ناصر ، ناصر بشیر، بصیر قادر،عابد علیم ، اصغر محرم ، جمال پیر محمد اور منور علی رٹہ نے استاد حیات شوکت کے انتقال پر دلی افسوس کااظہار کرتے ہوئے اسے بلوچی زبان ادب کے لیئے بہت بڑا نقصان قرار دیا اور اللہ تعالی سے ان کے مغفرت اور درجات بلندی کی دعا کی ۔

Comments

Popular posts from this blog

میں اسلم کے عہد میں جی رہا ہوں تحریر : مجیدبریگیڈ سلمان حمل