کیچ دشت میں پاکستانی فوجی کیمپوں میں اضافہ،تعداد 9 ہوگئی

تربت  کیچ دشت میں پاکستانی فوجی کیمپوں میں ایک اوراضافہ ہوگیا۔تفصیلات کے  مطابق بلوچستان بھر میں بلوچ قومی آزادی کی مزاحمت کے خاتمے کیلئے  بلوچستان کو مکمل ایک آرمی کیمپ میں تبدیل کردیا گیا۔کیچ کے علاقے دشت جو  گوادر سے ملحق ہے میں اب تک 8فوجی کیمپیں تعمیر کی جاچکی ہیں جبکہ گذشتہ  دنوں سیاہلو جالبار کے مقام پر ایک اور کیمپ اضافہ کرکے ان کی تعداد 9کردی  گئی ہے ۔واضع رہے کہ کیچ کا علاقہ دشت جو گوادر سے ملحق ہے اور سی پیک کے  روٹ پر واقع ہے جہان گذشتہ دو مہینوں سے فوجی آپریشن تواتر کے ساتھ جاری ہے  ۔اب تک سیکڑوں افراد کو حراست بعد لاپتہ کیا گیا ہے جن کی شناخت وتفصیلات  سنگر میں وقفے وقفے کے ساتھ شائع ہوتی رہی ہیں۔جبکہ سینکڑوں کی تعداد میں  لوگ ہجرت کرکے دیگر علاقوں میں منتقل ہوگئے ۔فورسز نے کئی افراد کو آپریشنز  دوران شہید بھی کردیاہے۔ باوثوق ذرائع بتاتے ہیں کہ دشت میں آئے روز کے  فوجی آپریشن کا مقصد یہاں کی آبادیوں کو سی پیک روٹ سے ہٹانا ہے جو سیکورٹی  خدشے کے پیش نظر کیا جارہاہے اور یہاں فوجی کیمپوں کی تعداد میں اضافہ بھی  اسی سلسلے کی کڑی ہے ۔اب تک پاکستانی فوج کے زریں بگ، کپکپار، بل نگور، شے  زنگی، درچکوہ، سبدان، پِٹوک اور دورو کے مقام پر کیمپیں قائم ہیں۔

Comments

Popular posts from this blog

میں اسلم کے عہد میں جی رہا ہوں تحریر : مجیدبریگیڈ سلمان حمل