بولان سے 3بلوچ سرمچاروں کی مسخ لاشیں برآمد




کوئٹہ بولان آپریشن میں شہید ہونے والے تین بلوچ سرمچاروں کی مسخ شدہ لاشیں  برآمد۔تفصیلات کے مطابق بولان کے پہاڑی علاقہ ناگاہو میں پاکستانی فوج نے 6  اپریل کو اٹھارہ ہیلی کاپٹروں کے ذریعے زمنی و فضائی آپریشن کیاجس میں 6  بلوچ سرمچاروں سمیت 54 افراد شہید کئے گئے جن میں 4 خواتین اور 5 شیر خوار  بچیشامل تھے۔ شہید افراد میں غلام نبی مری اور اس کے خاندان کے ٹوٹل 14  افراد جبکہ پکار نامی شخص کے خاندان کے 11افراد شہید ہوگئے۔مقامی ذرائع کے  مطابق اس علاقہ سے حالیہ دنوں صوفی مری ثنا اللہ اور سفیر بلوچ کی مسخ شدہ  لاشوں کے ڈھانچے برآمد ہوئی ہیں۔ یادر ہے کہ برآمد ہونے والی تین لاشیں آٹھ  ماہ بعد برآمد ہوئیں اس سے قبل آپریشن کے فوراً بعد تین لاشیں ملی تھیں جن  کی شناخت منظور،شعیب اورروشن بلوچ کے ناموں سے ہوگئی ۔مقامی ذرائع کے  مطابق ان سرمچاروں نے مذکورہ فوجی آپریشن میں لڑکر اپنے 80 کے قریب ساتھیوں  کو نکالنے میں کامیابی حاصل کیا تھااور ان تمام سرمچاروں کا تعلق آزادی  پسند تظیم یوبی اے سے تھا۔

Comments

Popular posts from this blog

میں اسلم کے عہد میں جی رہا ہوں تحریر : مجیدبریگیڈ سلمان حمل