Posts

Showing posts from December, 2016

پاکستانی فوج پر حملے اور مخبر ہلاکت کی ذمہ داری قبول کرتے ہیں،بی ایل ایف

Image
کوئٹہ بلوچستان لبریشن فرنٹ کے ترجمان گہرام بلوچ نے کہا کہ بروز  ہفتہ سرمچاروں نے مشکے کے علاقے جانی میں پاکستان آرمی پر حملہ کرکے تین  اہلکار ہلاک اور کئی زخمی کئے۔ یہ فوجی اہلکار جانی کی پہاڑیوں میں آپریشن  کی تیاری کے سلسلے میں اکھٹے ہورہے تھے۔ حملے کے بعد قابض فوج نے کئی مارٹر  فائر کئے اور کئی گاڑیوں پر مشتمل دوسرے فورس بھی علاقے میں پہنچ گئے۔  خدشہ ہے کہ ایک دفعہ پھر عام آبادی پر آپریشن کی بھر پور تیاری کی جا رہی  ہے۔28 دسمبرکوسخی داد ولد خدا بخش کو آواران کے علاقے ملار سے سرمچاروں نے  حراست میں لیا۔ریاستی مخبر نے اعتراف جرم کے ساتھ اپنے نیٹ ورک اور بلوچ  نسل کشی میں ملوث ہونے کے راز افشاں کیے، جسے بعد میں موت کی سزا دی  گئی۔گہرام بلوچ نے نامعلوم مقام سے سیٹلائٹ فون کے ذریعے کہا کہ ایک بار  پھر ان تما م لوگوں کو تنبیہہ کرتے ہیں جو ریاست کے لیے معاون کار بن رہے  ہیں باز آئیں، قومی آزادی کی جہد کے خلاف کام کرنے والے کسی بھی شخص کو  معاف نہیں کیا جائے گا

بلوچستان سے2016میں1009آپریشز میں3450افراد لاپتہ ، 630 قتل کئے گئے،خلیل بلوچ

Image
کوئٹہ بلوچ نیشنل فرنٹ (بی این ایف) کے چیئرمین خلیل بلوچ کا پریس کانفرنس  کوئٹہ میں بی این ایف کے رہنماؤں نے پڑھ کر سنایا۔ جس میں سال 2016کے  واقعات کی تفصیلات پیش کی گئیں۔ انہوں نے کہا کہ بلوچستان میں فورسز کے  ہاتھوں بلوچ نسل کشی کی کاروائیاں شدت اختیار کر چکے ہیں۔ بلوچستان عملاََ  ایک ایسے خطے کی صورت اختیار کرچکا ہے کہ یہاں انسانی حقوق کے قوانین کی  کھلی خلاف ورزیوں میں فورسز ملوث ہیں۔ کاؤنٹر انسر جنسی کی پالیسیاں بلوچ  عوام کی روز مرہ کی زندگی کو شدید متاثر کررہے ہیں۔ فورسز نے بلوچ قومی  تحریک کو کاؤنٹر کرنے کے لئے منشیات فروشوں ،مذہبی شدت پسندوں اور پیشہ ور  مجرموں کے گروہ تشکیل دئیے ہیں جو کہ سیاسی کارکنوں کو شہید و اغواء کرنے  میں ملوث ہیں، فورسز کے ساتھ ساتھ یہ لوگ اغواء برائے تاوان کی کاروائیوں  میں بھی باقاعدہ طور پر شریک ہیں۔تسلسل کے ساتھ جاری کاروائیوں کی وجہ سے  ہزاروں خاندان نکل مکانی پر مجبور ہوچکے ہیں۔ یکم جنوری سے لیکر دسمبر  2016تک ایک ہزار نوکارروائیوں میں کم از کم چھ سو تیس 630افراد قتل کیے  گئے، ان میں 115مسخ شدہ لاشیں بھی شامل ہیں۔ جبکہ اس کے علاوہ …

بی ایس او آزاد کے کارکنوں کی حفاظت جمہوری ممالک کی ذمہ داری ہے،ترجمان

Image
کوئٹہ بی ایس او آزاد کے مرکزی ترجمان نے کینڈین رفیوجی ڈویژن اور کینڈین  بارڈر سروسز ایجنسی کےپاکستانی میڈیا اور اسکی حکمرانوں کی بی ایس او آزاد  کے متعلق یکطرفہ موقف کو مدنظر رکھ کر تنظیم کے ممبرز اور رہنماؤں کی  کینیڈا میں پناہ کے کیسز کی سماعت کو ملتوی کرنے کے ردعمل میں کہا کہ  پاکستان خوددنیا بھر میں دہشت گردی پھیلانے کا زمہ دار ملک ہے، پاکستان کے  حکمرانوں کی منفی پروپگنڈوں کو بنیاد بنا کر بی ایس او آزاد کی سرگرمیوں کو  شک کی نگاہ سے دیکھنا کینیڈا جیسی زمہ دار ملک کے جمہوری روایات کی توہین  ہوگی۔انہوں نے کہا کہ پاکستان ایک غیرجمہوری ملک ہے، ریاستی جبر کے خلاف  بولنے والے پرامن تنظیموں کو دہشتگرد قرار دیکر ریاست ان پر پابندیاں عائد  کردیتا ہے۔ بی ایس او آزاد جیسی جمہوری جدوجہد پر یقین رکھنے والی تنظیم کی  سرگرمیوں پر بھی ریاست نے پابندی عائد کردی ہے، ترجمان نے کہا کہ فورسز نے  بی ایس او آزاد کے ایک سو سے زائد پرامن کارکنوں اور رہنماؤں کو اغواء کے  بعد اور ٹارگٹ کلنگ کے ذریعے قتل کردیا ہے۔ سینکڑوں کارکن اور لیڈران اب  بھی فورسز کی خفیہ ٹارچر سیلوں میں بند ہیں۔ ریاستی ب…

فورسز کیساتھ جھڑپ میں ساتھی سلیمان عرف علی شہید ہوئے ،بی ایل اے

Image
کوئٹہ بلوچ لبریشن آرمی کے ترجمان جئیند بلوچ نے نامعلوم مقام سے سیٹلائٹ  فون کے زریعے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ آج دوپہرقلات کے علاقے  نیمرغ کے قریب ریاستی ڈیتھ اسکواڈ اور ایف سی نے ملکر راہ چلتے ہوئے ہمارے  تین ساتھیوں پر حملہ کردیا دوطرفہ فائرنگ کے نتیجے میں ہمارے تنظیم کے  سینئرساتھی سلیمان بلوچ المعروف علی شدید زخمی ہوئے دشمن کے محاصرے اور  شدید زخمی ہونے کے باوجود مسلسل دو گھنٹے تک لڑتے رہے اور دشمن کا محاصرہ  توڑ کر محاصرے سے باہر اپنی پوزیشن مضبوط کرنے میں کامیاب ہوئے اور اسی  دوران بی ایل ایف کے ساتھی بھی جنگی ساتھیوں کے کمک پر پہنچ گئے اور دشمن  کو پسپائی پر مجبور کرکے انکے گرد گھیرا تنگ کرنا شروع کیا اس دوران دشمن  کے بہت سے اہلکار ہلاک و زخمی ہوئے اور دشمن کو شدید جانی نقصان اٹھانا پڑا  قلات ،سوراب اور نوشکی سے دشمن کے تازہ دم دستے علاقہ میں پہنچ کر گھیرا و  کووسعت دینے کی کوششیں کررہے ہیں آخری اطلاعات کے مطابق فضائی کمک بھی  علاقے میں پہنچایا جارہا ہے شہید سلیمان بلوچ عرف علی کا تعلق جھالاون کے  علاقے باغبانہ سے ہے اور وہ بلوچ قوم کے نوتانی قبیلے سے تع…

تمپ ریاستی آلہ کار کو ہلاک کرنے کی ذمہ داری قبول کرتے ہیں،بی ایل ایف

Image
کوئٹہ بلوچستان لبریشن فرنٹ کے ترجمان گہرام بلوچ نے ریاستی مخبر کے  ہلاکت کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے کہا کہ سرمچاروں نے ستائیس دسمبر کو تمپ  میں ریاستی آلہ کار مسلم ولد ملک میر و کو ہلاک کیا۔ وہ ایک سال سے قابض  پاکستان کے ساتھ مل کر بلوچ نسل کشی میں ریاستی اداروں کا ساتھ دیکر  انسانیت کے خلاف جرائم کا ارتکاب کر رہا تھا، اسے سزا دی گئی۔ وہاں موجود  بوہیر ولد حمزہ نے سرمچاروں کو روکنے اور مسلم کو بچانے کی کوشش کی، جس میں  بوہیرولد حمزہ مارا گیا، جس کا ہمیں بے حد افسوس ہے۔ بوہیر اپنی ہی غلطی  کی وجہ سے مارا گیا، ہماری ہمدردیاں اس کے خاندان اور لواحقین کے ساتھ ہیں  ۔گہرام بلوچ نے نامعلوم مقام سے سیٹلائٹ فون کے ذریعے کہا کہ ہم ایسے افراد  کو تنبیہ کرتے ہیں کہ وہ ریاستی آلہ کاروں کو بچانے کیلئے سرمچاروں کی  حکمت عملی کے سامنے رکاوٹ نہ بنیں تاکہ سرمچار دوسروں کو نقصان پہنچانے سے  بچ سکیں اور اپنی کارروائی بروقت مکمل کرکے محفوظ طریقے سے واپس جا سکیں ۔  مسلم ولد میرو تمپ و گردو نواح میں تمام آپریشنوں میں قابض فوج کے ساتھ  تھا۔ ایسے افراد کا تعلق جس سے بھی ہو، ہمارے نشانے پر ہیں ۔

Man wrongly arrested over Berlin attack says he fears for his life:Naveed Baloch

Image
Man wrongly arrested over Berlin attack says he fears for his life: Exclusive: Naveed Baloch says he was tied up, blindfolded and slapped by police after being held ‘because he ran across road’ By: Kate Connolly Naveed Baloch was crossing a road in central Berlin on the evening of 19 December, having just left a friend’s house. He was halfway over it when, seeing a car heading towards him, he increased his speed. “I then realised it was a police car. I stopped when they beckoned to me, and showed them all the ID I had on me.” They let him go but within seconds had called him back. Before he knew it he was in the back of the car, its lights flashing as it sped through Berlin. His hands were bound behind his back. Later that night, he said, he was blindfolded and taken from “one police station to another place” about 10 minutes away. He recalls two police officers “digging the heels of their shoes into my feet”, and one of the men “putting great pressure on my neck with his …

قلات میں شدید جھڑپیں جاری بلوچ سرمچاروں کیلئے دعا اپیل

Image
قلات : سرمچاروں اور پاکستانی ڈیتھ اسکواڈ میں جھڑپیں جانی نقصان کی اطلاع قلات کے علاقے نیمرغ میں داعش اور پاکستانی فوج کا بلوچ  سرمچاروں پر حملہ،تاحال گھمسان کی لڑائی جاری،یہاں آمدہ اطلاعات کے مطابق  قلات کے علاقے نیمرغ میں جمعرات کے دوپہر پاکستانی خفیہ اداروں و فوج کی  پشت پناہی میں اسلامی شدت پسند داعش نے بلوچ سرمچاروں کے کیمپ پر حملہ کر  دیا ہے،گھمسان کی لڑائی جاری ہے جبکہ تازہ اطلاعات کے مطابق  نوشکی،خاران،سوراب کے مختلف علاقوں سے بلوچ سرمچاروں نیمرخ پہنچ چکے ہیں  اور داعش کے حملوں کو نہ صرف پسپا کر دیا ہے بلکہ داعش کے کارندوں کو  گھیرنے کی اطلاعات ہیں۔مقامی ذرائع کے مطابق پاکستانی فوج کی پشت پناہی  والے داعش جسے کٹھ پتلی وزیر اعلیٰ ثناہ زہری،شفیق مینگل و دیگر کی آشیر  باد حاصل ہے انکو بڑی تعداد میں جانی نقصان کا سامنا ہے۔سنگر ذرائع کے  مطابق تمام آزادی پسند مسلح تنظیموں نے مل کر نہ صرف داعش کے حملے کو پسپا  کر دیا ہے بلکہ نیمرخ کے مذکورہ گرد نواع میں بی ایل ایف،بی آر اے،بی ایل  اے کے سرمچار بڑی تعداد میں پہنچ چکے ہیں۔اور تازہ اطلاعات کے مطابق  پاکستانی فوج داعش کی مدد…

کوئٹہ سے 2لاشیں برآمد،چمن میں فائرنگ ، 1ہلاک

Image
کوئٹہ کے 2 مختلف علاقوں سے 2 افراد کی لاشیں ملی ہیں۔ پولیس  کے مطابق پشین اسٹاپ کے قریب سے ایک ہیروئنی کی لاش ملی جنہیں شناخت کے لئے  سول ہسپتال منتقل کر لیا گیا جبکہ سٹیلائٹ ٹاؤن سے بھی ایک شخص کی لاش ملی  جنہیں پولیس نے سول ہسپتال منتقل کر دیا ۔دریں اثنابلوچستان کے علاقے چمن  میں نامعلوم افرادکی فائرنگ سے ایک شخص ہلاک ہوگیا۔ اطلاعات کے مطابق چمن  بائی پاس پر نامعلوم مسلح افراد نے فائرنگ کر کے ایک ثناء اللہ نامی شخص کو  قتل کر دیا۔ لاش کو ضروری کا رروائی کے بعد ورثاء کے حوالے کر دیاگیا۔

دشت کاشاپ میں فوجی آپریشن،12افراد حراست بعد لاپتہ

Image
دشت کیچ دشت میں پاکستانی فوج کا آپریشن ، 12افراد حراست بعد لاپتہ  ۔تفصیلات کے مطابق آج بروز جمعرات کو پاکستانی فوج نے گوادرسے ملحق کیچ کے  علاقے دشت کاشاپ میں علی الصبح فوجی آپریشن کرکے چادرو اچاردیواری کی تقدس  کو پاما ل کیا اور خواتین و بچوں کو تشدد کا نشانہ بنایاجبکہ گھروں کے  دروازے توڑ دیئے اور قیمتی سامان لوٹ لئے ۔آپریشن دوران فورسز نے 12افراد  کو حراست میں لیکرلاپتہ کردیا جن کی شناخت نادل شاہ ولددادکریم، منیر  ولدرسول بخش، دلیپ ولدگنگْزار، شوکت ولدناصر، ندیم ولدقادر بخش، محمد نور  ولد دوست محمد، بالاچ ولددادرحمان، نسیم ولد برکت، ملک ولدشیرمحمد، عزیز  ولدسخیداد، بہادر ولدعلی حسین پنجگوری کے ناموں سے ہوگئیں۔واضع رہے کہ  گوادر سے ملحق اور سی پیک روٹ پر واقع ضلع کیچ کے علاقے دشت کے تمام قصبوں  میں گذشتہ مہینوں سے پاکستانی فوج کی آپریشن و بربریت جاری ہے جس سے 220سے  زائد افراد کو حراست میں لیکر لاپتہ کیا گیا جبکہ سینکڑوں کی تعداد میں  لوگوں نے اپنے گھربار چھوڑ کر نقل مکانی کی ہے ۔

مند : فورسز ہاتھوں لاپتہ 2افراد بازیاب ہوکر گھر پہنچ گئے

Image
مند سے فوج کے ہاتھوں لاپتہ 2افراد بازیاب ہوکر گھر پہنچ گئے ۔آمدہ  اطلاعات کے مطابق 16دسمبر کو پاکستانی فوج نے ضلع کیچ کے علاقے مندمیں فوجی  آپریشن کرکے دو افراد کو حراست بعد لاپتہ کیا ۔13روز بعد حراست بعد لاپتہ  کئے گئے سلمان ولد ڈاکٹر مجید اور یارجان ولد حاجی رحمت اللہ آج بازیاب  ہوکر گھر پہنچ گئے ہیں ۔واضع رہے بلوچستان بھر میں روزانہ درجنوں کی تعداد  میں پاکستانی فوج لوگوں کو حراست میں لیکر لاپتہ کرتی ہے جن میں دو یا تین  افراد بازیاب ہوجاتے ہیں اور باقیوں کے بارے میں کچھ پتہ نہیں چلتا  اورزیادہ تر کی لاشیں ویراونوں میں پھینک دی جاتی ہیں ۔

آواران پاکستانی فوج کی زمینی آپریشن جاری،باپ بیٹا حراست بعد لاپتہ

Image
آواران کے مختلف علاقوں میں پاکستانی فوجی آپریشن جاری۔یہاں  آمدہ اطلاعات کے مطابق پاکستانی زمینی فوج نے پیراندر،زرنکولی کور،زیارت  ڈن،لباچ ڈنسر آبادیوں کا محاصرہ کر کے گھروں میں لوٹ مار بعد کئی گھروں کو  نذر آتش کر دیا ہے،تازہ اطلاعات کے مطابق تاحال علاقے فوجی محاصرے میں ہیں  اور لباچ ڈنسر سے غلام جان اور انکے بیٹے کو بھی فوج نے حراست بعد لاپتہ کر  دیا ہے،آپریشن حوالے مزید معلومات جاری ہیں

کوہلو بازار میں سرکاری معتبرین پر بم حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہیں، بی ایل اے

Image
کوئٹہ  بلوچ لبریشن آرمی کے ترجمان جئیند بلوچ نے کہا ہے کہ گزشتہ روز  کوہلو بازار میں سرکاری معتبرین پر بم حملہ کیا جس میں نقصان کی شدت  کوعوامی تحفظ کے خاطر کم رکھا گیا تھا ۔یہ با ت انہوں نے بد ھ کی شب  نامعلوم مقام سے سیٹلائٹ فون کے ذریعے این این آئی کو بتائی ۔ ترجمان نے  کہا یہ حملہ ان تمام معتبرین کے لئے ایک وارنگ ہے کہ وہ فورسز کے ایجنڈے کا  حصہ نہ بنیں اور ریاست کے استحصالی منصوبوں اور فورسز کے آپریشنز میں  معاونت سے گریز کریں اور کسی بھی حوالے سے وطن و قوم دشمنی کے ارتکاب سے  بچیں ۔بی ایل اے ان بلوچ معتبرین پر یہ واضع کرنا چاہتی ہے کہ جو دشمن کے  پروپیگنڈہ پر یقین کرکے بلوچ قومی تحریک کی خاتمے پر بغلیں بجا کر بلوچ  قومی وسائل کے سوداگری میں حصہ دار بن چکے ہیں یا اب پر تول رہے ہیں انکو  اس بات کی ہرگز اجازت نہیں دی جائے گی اور ان سے حساب برابر ہوگا۔

آواران میں ریاستی آلہ کار مخبرکی ہلاکت کی ذمہ داری قبول کرتے ہیں،بی ایل ایف

Image
کوئٹہ بلوچستان لبریشن فرنٹ کے ترجمان گہرام بلوچ نے نامعلوم مقام سے  سٹیلائٹ فون کے ذریعے کہا کہ سرمچاروں نے منگل کے روز آواران میں ریاستی  آلہ کار فتح محمد عرف پٹو کو فائرنگ کرکے ہلاک کیا۔ وہ علاقائی مسلم لیگی  قیادت اور نیشنل پارٹی کے ساتھ مل کر اُن کی ڈیتھ اسکواڈز کیلئے خبر رسانی،  لوگوں کو دھمکاکر زبردستی سرنڈر کروانے میں فوج کے ساتھ براہ راست ملوث  تھا۔ اُس کے ذریعے سرنڈر ہونے والوں میں سے ایک شخص ابھی تک لاپتہ ہے۔ جسے  لالچ دیکر فوجی کیمپ لے جایا گیا اور وہ ابھی تک واپس نہیں آیا۔ اس طرح وہ  سادہ لوح عام بلوچوں کو فوجی کیمپ لے جا کر سرنڈر کا ڈرامہ رچانے میں اہم  کردار ادا کر رہے تھے۔ کئی دفعہ تنبیہ کے باوجود وہ اپنی انسانیت دشمن  کرتوتوں سے باز نہیں آئے۔ جس پر اسے موت کی سزا دے دی گئی۔

دشت گوران میں قمبر خان کے بیٹے کا ریاستی پشت پناہی میں لوگوں پر حملہ

Image
دشت  منگل کے روزدشتِ گوران میں زہری اور مینگل قبیلے کے درمیان  فائرنگ کاتبادلہ ہوا جس میں دونوں طرف سے جدید اسلحہ استعمال ہوا لیکن کسی  جانی نقصان کی اطلاع نہیں ملا۔نامہ ناگار کے مطابق واقعہ اس وقت پیش آیا  جبریاستی اہم کارندہ اور سردار اختر مینگل کے دست راست قمبر خان کے بڑے  بیٹے پسند خان اپنے ساتھیوں سمیت 3سرف گاڑیوں پرجو مازہریو کے ایک چھوٹے سے  گاؤں موسیٰ خانزئی پر حملہ آور ہوا اور فائرنگ کی۔جواب میں زہری قبائل کے  مسلح افراد نے پسند خان اور ان کے ساتھیوں کو چاروں طرف سے گھیرلیااور  بھرپور فائرنگ کا سلسلہ شروع ہوالیکن اسی دوران ایف سی دشتِ گوران پہنچ گئی  اور پسند خان کو گھیرے سے نکالنے میں کامیاب ہو گئی۔واضح رہے کہ قمبر خان  اس وقت مکمل پاکستانی فوجی سرپرستی میں بلوچ جہد آزادی کے خلاف سرگرم عمل  ہے۔

ماما سکندر کو خراج عقیدت پیش، آخری سانس تک بلوچ قومی جہد سے منسلک رہے ،بی این ایم

Image
کوئٹہ بلوچ نیشنل موومنٹ کے مرکزی ترجمان نے کہنہ مشق سیاستدان و قوم پرست  ماما سکندر بلوچ کی وفات پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ماما سکندر  بلوچ نے اپنی پوری زندگی بلوچ قوم کی خدمت و قومی آزادی کی جد وجہد میں صرف  کی ۔ ان کی موت پر ہمیں نہایت افسوس ہے اور ہم سوگواراں کے غم میں برابر  شریک ہیں۔ اللہ تعالیٰ اُنہیں جنت الفردوس میں جگہ عطا فرمائے۔ بی این ایم  اُن کی جہد کو قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے اور انہیں خراج عقیدت پیش کرتا ہے۔  ترجمان نے کہا کہ ماما سکندر بلوچ ستر کی دہائی سے لیکر آخری عمر تک  بیماری کی حالت میں بھی بلوچ قوم و بلوچ قومی جد و جہد سے منسلک رہے۔ ستر  کی دہائی میں ذوالفقار بھٹو کی دور حکومت میں انہیں مختلف قلی کیمپوں میں  انسانیت سوز سزائیں دی گئیں ، مگر اپنی موقف سے پیچھے نہیں ہٹے۔ اس صدی کے  آغاز میں قومی جد وجہد میں بھی وہ پیران سالی اور بیماری کے باوجود آزادی  پسندوں کی جلسوں، تقریبات، سیمینار، ریلی یا پریس کانفرنسوں میں ہرجگہ سب  سے پہلے حاضر ہو کر اپنی قوم دوستی کا ثبوت دیتے تھے۔ اور قوم پرست تنظیموں  کے ساتھ ہر قسم کی مدد و تعاون میں وہ سب سے پہلے…

آواران مذہبی شدت پسندوں نے ذگر خانہ نذر آتش کر دیا

Image
آواران ریاستی پشت پناہی میں ذگر خانہ نذر آتش،یہاں آمدہ اطلاعات کے  مطابق آواران کے علاقے پیراندر میں ترونگوڑی کے مقام پر واقع مھمد پیر  زیارت کو مسلح افراد نے نذر آتش کر دیا،مقامی ذرائع کے مطابق مسلح افراد  سادے لباس میں ملبوس تھے اور فوجی گاڑی میں سوار تھے جنکے طالبان جیسے  داڑھی تھے۔واضح رہے کہ آواران،گریشہ،دشت سمیت کیچ کے کئی علاقوں میں  پاکستانی فوج و خفیہ اداروں کی مدد سے اسلامی مذہبی شدت پسند مُلا ذگر خانہ  پر حملوں،عوام کی قتل عام اور عبادت گاؤں کی نذر آتش میں ملوث رہے ہیں۔

ماما سکندر کرد انتقال کرگئے

Image
ماما سکندر کرد انتقال کرگئے قوم دوست شخصیت لالہ سکندر کرد آج صبح انتقال کر گئے، وہ مختلف عارضوں میں مبتلا تھے، جب تک زندہ رہے وہ بلوچ آزادی پسند حلقوں کے قریب رہے اور بغیر کسی خوف کے پاکستان کی غیر فطری بنیاد کو نہ ماننے والے بلوچ کی حیثیت سے اپنی پہچان رکھی،، انہوں نے وصیت کی ہے کہ انھیں شہیدآء قبرستان نیو کاہان میں نواب مری کے پہلو میں دفن کیا جائے لیکن خاندانی ذرائع کے مطابق ابھی تک فیصلہ نہیں ہوا کہ انھیں کہاں دفن کیا جائے گا

Refugee praised as 'inspirational' by BBC deemed inadmissible to Canada

Image
An activist praised for her “campaigns for independence for Balochistan” from Pakistan has had her asylum hearing suspended by Canadian border-enforcement authorities.  Karima Mehrab was recognized by the BBC for her “campaigns for independence for Balochistan,” a formerly sovereign state that was seized by Pakistan in 1948.

A refugee named by the BBC as one of the world’s 100 most “inspirational and influential” women in 2016 has had her asylum claim suspended by Ottawa because of her activism.Karima Mehrab was recognized by the British Broadcasting Corporation for her “campaigns for independence for Balochistan,” an area that had been under the British rule until 1947 and was later acceded to Pakistan as one of the country’s four provinces. Ironically, Mehrab’s efforts are also what got the 33-year-old chair of the Baloch Students Organization (BSO), one of the groups behind the Balochistan separatist movement, into trouble in Canada.Mehrab is facing an inadmissibility o…

بلوچستان میں پاکستان کی شیطانی مردم شماری کیخلاف بلوچ مزاحمت کرینگے،ڈاکٹراللہ نذر بلوچ

Image
کوئٹہ  آزادی پسند بلوچ رہنما ڈاکٹر اللہ نذر بلوچ نے بلوچستان میں مردم  شماری کے خلاف عوامی مزاحمت کااعلان کردیااور انہوں نے اس سلسلے میں بلوچ  قوم سے مزاحمت کی اپیل کردی۔اس بات کا اعلان بلوچ رہنما نے سماجی رابطے کی  ویب سائٹ ’’ٹوئٹر ‘‘ پر اپنے دو تازہ ترین ٹوئیٹ میں کیاہے، جس میں انہوں  نے کہا ہے کہ ’’یہ مردم شماری بلوچ قوم کے وجود کے خلاف ہے۔ ہم بلوچ عوام  سے قابض ریاست کے اس عمل کے خلاف سخت مزاحمت کی اپیل کرتے ہیں۔‘‘ آزادی  پسند بلوچ رہنما نے اپنے دوسرے ٹوئیٹ پیغام میں مردم شماری کے حوالے سے سخت  موقف اپناتے ہوئے کہا ہے کہ’’بلوچ پاکستان کی طرف سے کی جانے والی شیطانی  مردم شماری کی مخالفت کریں گے۔ کسی کو بلوچستان میں مردم شماری سرانجام  دینے کی اجازت نہیں دی جائیگی۔‘‘واضع رہے کہ پاکستان سرکار نے بلوچستان میں  مارچ میں مردم شماری کا اعلا ن کیا ہے۔

ہوشاپ ، مند: حملوں کی ذمہ داری قبول کرتے ہیں،بی ایل ایف

Image
کوئٹہ  بلوچستان لبریشن فرنٹ کے ترجمان گہرام بلوچ نے مختلف حملوں کی  ذمہ داری قبول کرتے ہوئے کہا کہ آج بروز منگل سرمچاروں نے کیچ کے علاقے  ہوشاب میں دمب کور میں عسکری تعمیراتی کمپنی فرنٹیر ورکس آرگنائزیشن (ایف  ڈبلیو او) کی پانی سپلائی کرنے والی ٹینکر پر حملہ کرکے ایک اہلکار کو ہلاک  کیااور گاڑی کو نقصان پہنچایا۔ ہوشاب میں فوجی کمپنی چین پاکستان اکنامک  کوریڈور (سی پیک ) کی تعمیر میں مصروف ہے۔ بلوچ قوم نے اِن استحصالی  منصوبوں کو مسترد کیاہے۔ ان پر حملے جاری رہیں گے۔ گہرام بلوچ نے نامعلوم  مقام سے سیٹلائٹ فون کے ذریعے مزیدکہا کہ منگل ہی کے روز کیچ کے علاقے مند  میں پاکستانی فوج کی گوانی چیک پوسٹ پر خود کارو بھاری ہتھیاروں سے حملہ  کرکے قابض فوج کو بھاری جانی و مالی نقصان پہنچایا۔ یہ حملے بلوچستان کی  آزادی تک جاری رہیں گے۔

حالات میں کوئی تبدیلی نہیں آئی، کشت و خون بدستور جاری ہے۔ نواب براہمدغ بگٹی

Image
لندن  بلوچ قومی رہنما اور قائد بلوچ ریپبلکن پارٹی نواب براہمدغ بگٹی نے برطانوی نشریاتی ادارے کو انٹریوں میں کہا ہے کہ جب بھی کوئی نیا جنرل یا حکومتی نمائدہ آیا ہے وہ یہی کہتا رہا ہے کہ عوام نے آزادی پسندوں کو مسترد کردیا ہے اور عوام ان کے ساتھ ہے مزاکرات اور بات چیت کے حوالے سوال پر ان کا کہنا تھا بلوچستان بھر میں آپریشن اسی طرح جاری ہے مسخ شدہ لاشوں کا ملنا بھی جاری ہے بلکہ ان میں مزید تیزی لائی جارہی ہے انھونے مزید کہا کہ جنرل مشرف کے جانے اور کیانی کے آنے پر بھی بلکل اسی طرح کی باتیں کی گئی کہ تبدیلی آئی ہے مائینڈ سیٹ چینج ہوا ہے اب شاید حالات ٹھیک ہونگے مگر اس کے بعد آپریشن میں تیزی لائی گئی اور کشت وخون میں بھی اضافہ کیا گیا پہلے لوگوں کو پکڑ کر ٹارچر کر کے چھوڑ دیتے تھے پھر ان کو مار کر ان کی لاشوں کو مسخ کر کے پھکنا شروع کیا جو اب تک جاری ہے ایک سوال کے جواب میں بلوچ رہنما کا کہنا تھا کہ ہم سیاسی لوگ ہے اور سیاسی طریقے سے ہی مسائل کا حال چاہتے ہیں آپریشن فوج نے شروع کیا اور طاقت ور بھی وہی ہے انھونے نے مزید کہا کہ مجھے حالات ٹھیک ہوتے ہوئے نظر نہیں آرہے کیونکہ لوگ…

کوہلو:مارکیٹ میں بم دھماکے سے 4افراد زخمی

Image
کوئٹہ  بلوچستان کے علاقے کوہلو بازار میں مارکیٹ کی چھت پر رکھا ہوا  بم زور دار دھماکے سے پھٹ گیا جس کے نتیجے میں4 افراد زخمی ہو گئے اور  دکانوں کے شیشے ٹوٹ گئے اور متعدد کو نقصان پہنچا ۔ آمدہ اطلاعات کے مطابق  گزشتہ روز کوہلو بازار میں واقعہ میر یار محمد مارکیٹ کی کی چھت پر متعدد  افراد بیٹھے ہوئے تھے کہ نامعلوم افراد کی جانب سے نصب کیا گیا بم زور دار  دھماکے سے پھٹ گیا جس کے نتیجے میں ڈاکٹر خالد، تاج محمد، محمد خان اور  شاہنواز نامی 4 افرادشدید زخمی ہو گئے۔ دھماکے سے مارکیٹ کو نقصان پہنچا  اور دکانوں کے شیشے ٹوٹ گئے ۔

ڈیرہ بگٹی میں فائرنگ باپ ہلاک،ماں بیٹا شدیدزخمی

Image
کوئٹہ  بلوچستان کے علاقے ڈیرہ بگٹی میں نامعلوم افراد نے گھر میں گھس  کر فائرنگ کر کے ایک شخص کو قتل، ماں او ر بیٹے سمیت2 افراد کو زخمی کر  دیا۔ یہاں آمدہ اطلاعات کے مطابق گزشتہ شب ڈیرہ بگٹی کے علاقے مرو میں  رہائش پذیر فتو نامی شخص کے گھر پر نامعلوم افراد نے گھر میں گھس کرفائرنگ  کر دی جس کے نتیجے میں فتو موقع پر ہلاک اور اس کی بیوی اور بیٹا مری خان  شدید زخمی ہو گئے۔

کیچ دشت میں پاکستانی فوجی کیمپوں میں اضافہ،تعداد 9 ہوگئی

Image
تربت  کیچ دشت میں پاکستانی فوجی کیمپوں میں ایک اوراضافہ ہوگیا۔تفصیلات کے  مطابق بلوچستان بھر میں بلوچ قومی آزادی کی مزاحمت کے خاتمے کیلئے  بلوچستان کو مکمل ایک آرمی کیمپ میں تبدیل کردیا گیا۔کیچ کے علاقے دشت جو  گوادر سے ملحق ہے میں اب تک 8فوجی کیمپیں تعمیر کی جاچکی ہیں جبکہ گذشتہ  دنوں سیاہلو جالبار کے مقام پر ایک اور کیمپ اضافہ کرکے ان کی تعداد 9کردی  گئی ہے ۔واضع رہے کہ کیچ کا علاقہ دشت جو گوادر سے ملحق ہے اور سی پیک کے  روٹ پر واقع ہے جہان گذشتہ دو مہینوں سے فوجی آپریشن تواتر کے ساتھ جاری ہے  ۔اب تک سیکڑوں افراد کو حراست بعد لاپتہ کیا گیا ہے جن کی شناخت وتفصیلات  سنگر میں وقفے وقفے کے ساتھ شائع ہوتی رہی ہیں۔جبکہ سینکڑوں کی تعداد میں  لوگ ہجرت کرکے دیگر علاقوں میں منتقل ہوگئے ۔فورسز نے کئی افراد کو آپریشنز  دوران شہید بھی کردیاہے۔ باوثوق ذرائع بتاتے ہیں کہ دشت میں آئے روز کے  فوجی آپریشن کا مقصد یہاں کی آبادیوں کو سی پیک روٹ سے ہٹانا ہے جو سیکورٹی  خدشے کے پیش نظر کیا جارہاہے اور یہاں فوجی کیمپوں کی تعداد میں اضافہ بھی  اسی سلسلے کی کڑی ہے ۔اب تک پاکستانی فوج کے زریں ب…

تمپ میں فورسز ہاتھوں 4افراد لاپتہ،کوئٹہ میں 2لاپتہ افراد بازیاب

Image
تمپ میں پاکستانی فوج کا آپریشن ، 4افراد حراست بعد لاپتہ۔آمدہ  اطلاعات کے مطابق آج بروز منگل کوپاکستانی فوج نے کوہاڑ اور پل آباد میں  آپریشن کرکے 4افراد کو حراست میں لیکر نامعلوم مقام پر منتقل کردیا ہے  ۔حراست میں لئے گئے افراد کی شناخت زاہد ولد خدا بخش، صادق ولدملک داد  اورسلام ولد اسلم رہائشی کوہاڈ جبکہ عبید ولد فاضل رہائشی پل آباد کے ناموں  سے ہوگئی ہے ۔دریں اثناکوئٹہ نیو کاہان سے لاپتہ 2افراد بازیاب ہوگئے  ۔سنگر کو ملنے والی اطالاعات کے مطابق کوئٹہ نیو کاہان کے رہائشی عزیز خان  ولد شیر خان اور جماند خان ولد حسن خان لنک روڈ ہزار گنجی کوئٹہ سے بازیاب  ہوگئے۔جنہیں 3ستمبر 2016میں فورسز نے کوئٹہ سے حراست میں لیکر لاپتہ کیا  تھا۔

Latest Interview of Baloch National Leader Nawab Brahumdagh Bugti on BBC URDU

Image

کیچ پاکستانی فورسز پر حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہیں،بی ایل ایف

Image
کوئٹہ   بلوچستان لبریشن فرنٹ کے ترجمان گہرام بلوچ نے پاکستانی فورسز  پر حملوں کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے کہاکہ کل رات سرمچاروں نے ضلع کیچ کے  علاقے ہیرونک اور تجابان کے درمیان ہپتاری ندی میں پاکستانی فوج کی ایک  گشتی گاڑی پر حملہ کرکے گاڑی کو بری طرح نقصان پہنچایا۔ جس میں سوار تمام  اہلکار ہلاک و زخمی ہوئے ہیں۔ ان علاقوں میں پاکستانی فوج کا گشت، کیمپ اور  چوکیاں نام نہاد ترقی اور چین پاکستان اکنامک کوریڈور(سی پیک ) منصوبے کی  حفاظت کیلئے قائم کی گئی ہیں۔ جہاں فوجی آپریشن کے ذریعے ہزاروں خاندانوں  کونقل مکانی پر مجبور کیا گیاہے۔ اور ہزاروں افراد کو اُٹھا کر لاپتہ کیا  گیا ہے، جبکہ سینکڑوں لاشیں پھینکی گئی ہیں۔ اس طرح یہ منصوبہ آغاز ہی میں  بلوچ نسل کشی کا سبب بن گیا ہے۔ جس کیخلاف ہر طرح مزاحمت جاری رہی گی۔ -

بی آ ر اے نے مختلف واقعات کی ذمہ داری قبول کر لی

Image
کوئٹہ  بلوچ ریپبلکن آرمی نے مختلف واقعات کی ذمہ داری قبول کر لی  ،ترجمان سر باز بلوچ نے واقعات کی ذمہ داری قبول کر تے ہوئے کہاہے کہ نصیر  آباد کے علاقے چھتر میں سونواہ کے مقام پر 132 کے وی بجلی کے تین کھمبوں کو  دھماکہ خیز مواد سے اڑیا اور آج صبح کھمبوں کی مرمت کے لئے آنے والے ٹیم  کے حفاظت پر مامورفورسزکی گاڑی کو ریموٹ کنٹرول بم سے نشانہ بنایا جس کے  نتیجے میں چار اہلکار ہلاک اور کئی زخمی ہو گئے جبکہ ایک اور کاروائی میں  فورسز کے قافلے پر ریموٹ کنٹرول بم سے حملہ کیا جس کے نتیجے میں دو اہلکار  ہلاک اور چھ کے قریب زخمی ہوئے دھماکے میں فورسز کی گاڑی بھی مکمل طور پر  تباہ ہوگئی ترجمان کا کہنا ہے کہ مقصد کے حصول تک ہماری کا رروائیاں جاری  رہے گی۔

خطے میں امن و استحکام یا پاکستان کی عسکری امداد،دنیا کو ایک کا چناؤکرنا ہوگا،خلیل بلوچ

Image
کوئٹہ بلوچ نیشنل فرنٹ کا چھٹا مرکزی کونسل اجلاس فرنٹ کے چیئرمین خلیل  بلوچ کی صدارت میں منعقد ہوا ۔ جس میں کونسل کے تما م کونسلروں نے شرکت کی  ۔اجلاس کا ا فتتاح شہدا ء کی یاد میں دومنٹ کی خاموشی سے ہوا۔ اجلاس میں  سیکریٹری رپورٹ ، تنظیمی امور،بلوچستان اورخطے کی سیاسی صورتحال او ر آئندہ  لائحہ عمل کے ایجنڈے زیر بحث رہے۔ اوراتحاد کے کابینہ کا مدت پوراہونے سے  نئی کابینہ بھی منتخب کیاگیاجس میں خلیل بلوچ چیئرمین ،کمال بلوچ سیکریٹری  جنرل اوردل مرادبلوچ انفارمیشن سیکریٹری منتخب ہوئے ۔مرکزی کونسل اجلاس سے  خطاب کرتے ہوئے بلوچ نیشنل فرنٹ کے چیئرمین خلیل بلوچ نے کہا کہ دنیا  کوپاکستان کی سیاسی و عسکری مددیا خطے میں’ امن و استحکام کے حصول‘ میں سے  ایک کا چناؤکرنا ہوگا،پاکستانی ریاست دہشت گردی کا مرکز ہے جہاں مذہبی شدت  پسند پوری دنیا میں پھیلنے اور بدامنی پھیلانے کی تربیت آزادی سے حاصل  کررہے ہیں۔ پاکستان کسی تاریخی یا تہذیبی ارتقاء اور سیاسی یا انقلابی  جدوجہد کی پیداوار نہیں بلکہ مغرب کے مفادات کی حفاظت کے لئے تشکیل پانے  والا ملک ہے جس کی پالیسیوں نے پوری انسانیت کو بحران سے د…

حافظ سعید پاکستانی فوج اور آئی ایس آئی کا دہشت گرد اثاثہ ہے،ڈاکٹر اللہ نذر بلوچ

Image
کوئٹہ  بلوچ آزادی پسند رہنما ڈاکٹر اللہ نذر بلوچ نے سوشل میڈیامیں  اپنے دو حالیہ ٹوئیٹ میں عیسائی برادری کو کرسمس کی مبارک باد کے ساتھ ساتھ  ریاستی مذہبی شدت پسند حافظ سعید کے کوئٹہ دورے پر بھی ردِ عمل ظاہر کیا  ہے۔انہوں نے اپنے تازہ ترین ٹوئیٹ میں عیسائی برادری کو کرسمس کی موقع پر  مبارک باد دیتے ہوئے کہا کہ’’تمام روشن خیال عیسائی جو انسانیت،سیکولراِزم  اور مذہبی رواداری میں یقین رکھتے ہیں کو کرسمس مبارک ہو۔ انہوں نے اپنے  دوسرے ٹوئیٹ میں حافظ سعید کے حوالے سے کہا کہ’’ حافظ سعید پاکستانی فوج  اور آئی ایس آئی کا دہشت گرد اثاثہ ہے جو بلوچ کے سیکولر معاشرے کو آلودہ  کرنا چاہتا ہے لیکن ہم اس شیطان کے خلاف مزاحمت کرینگے‘‘۔واضع رہے کہ حافظ  سعیدنے گذشتہ دنوں کوئٹہ میں سرکاری پروٹوکول میں ایک جلسہ کیا جس میں  انہوں نے اس بات کا اعتراف بھی کیا کہ وہ بلوچستان میں اپنی سرگرمیاں جاری  رکھیں گے۔جبکہ بلوچ آزادی پسند قوتیں ریاستی خفیہ اداروں اور فوج کی  سرپرستی میں مذہبی شدت پسند تنظیموں کی ڈیتھ اسکواڈ ز کے تشکیل و قیام پر  بیانات جاری کر چکے ہیں۔

بولان سے 3بلوچ سرمچاروں کی مسخ لاشیں برآمد

Image
کوئٹہ بولان آپریشن میں شہید ہونے والے تین بلوچ سرمچاروں کی مسخ شدہ لاشیں  برآمد۔تفصیلات کے مطابق بولان کے پہاڑی علاقہ ناگاہو میں پاکستانی فوج نے 6  اپریل کو اٹھارہ ہیلی کاپٹروں کے ذریعے زمنی و فضائی آپریشن کیاجس میں 6  بلوچ سرمچاروں سمیت 54 افراد شہید کئے گئے جن میں 4 خواتین اور 5 شیر خوار  بچیشامل تھے۔ شہید افراد میں غلام نبی مری اور اس کے خاندان کے ٹوٹل 14  افراد جبکہ پکار نامی شخص کے خاندان کے 11افراد شہید ہوگئے۔مقامی ذرائع کے  مطابق اس علاقہ سے حالیہ دنوں صوفی مری ثنا اللہ اور سفیر بلوچ کی مسخ شدہ  لاشوں کے ڈھانچے برآمد ہوئی ہیں۔ یادر ہے کہ برآمد ہونے والی تین لاشیں آٹھ  ماہ بعد برآمد ہوئیں اس سے قبل آپریشن کے فوراً بعد تین لاشیں ملی تھیں جن  کی شناخت منظور،شعیب اورروشن بلوچ کے ناموں سے ہوگئی ۔مقامی ذرائع کے  مطابق ان سرمچاروں نے مذکورہ فوجی آپریشن میں لڑکر اپنے 80 کے قریب ساتھیوں  کو نکالنے میں کامیابی حاصل کیا تھااور ان تمام سرمچاروں کا تعلق آزادی  پسند تظیم یوبی اے سے تھا۔

بی ایل ایف نے مختلف حملوں کی ذمہ داری قبول کر لی

Image
کوئٹہ  بلوچستان لبریشن فرنٹ کے ترجمان گہرام بلوچ نے مختلف حملوں کی  ذمہ داری قبول کرتے ہوئے کہا کہ پیر کے روزضلع پنجگور کے علاقے گچک میں  نایاب پرندے تلور کی شکار کرنے والی متحدہ عرب امارات دبئی کے عرب شیوخ کی  سیکورٹی پرسرمچاروں نے حملہ کیا، جس سے سیکورٹی پسپا اور شیوخ کی گاڑیوں کو  نقصان پہنچا۔ سرمچاروں نے شیوخ کو قدیم آپسی تعلقات اورروایات کی بنیاد پر  چھوڑ دیا اور امید ظاہر کی کہ وہ آئندہ قابض پاکستان سے بلوچستان میں شکار  کیلئے کوئی بھی علاقہ لیز کے طور پر نہیں لیں گے، کیونکہ یہ ایک مقبوضہ  علاقہ ہے اور بلوچ اس قبضے کے خلاف سات دہائیوں سے مزاحمت کررہے ہیں۔  پنجگور گچک میں سرمچاروں نے تنبیہہ کے بعد عرب شیوخ کو چھوڑ دیا۔ گہرام  بلوچ نے کہا کہ ہم نے پہلے بھی ہوشاب اور کولواہ حملوں کے بعد عرب شیوخ کو  خبردار کیا تھا کہ وہ پاکستان کے کسی دھوکہ میں نہ آئیں ۔ کیونکہ مقبوضہ  بلوچستان حالت جنگ میں ہے اور بلوچ قوم پر غیر انسانی بربریت اور مظالم  ڈھائی جارہی ہیں۔ ایسے میں پاکستان پر بھروسہ کرنا اور شکار جیسی تفریح  کرنا غیر انسانی ، غیر جمہوری فعل ہے۔ عرب دنیا کو بلوچستان اور …

کردگاپ سے لاپتہ فٹبالرز کو بازیاب کیا جائے : نصراللہ بلوچ

Image
کوئٹہ وائس فار بلوچ مسنگ پرسنز کے چیئرمین نصراللہ بلوچ نے کہا کہ مستونگ سے 7 دسمبر کو فٹبال گراؤنڈ سے لاپتہ کئے گئے 4 فٹبالر کو فوری طور پر بازیاب کرایا جائے اگر ان پر کوئی الزام ہے تو عدالت میں پیش کیا جائے اپنے جاری کر دہ بیان میں کہا گیا کہ 7 دسمبر کو مستونگ میں فٹبال گراؤنڈ سے حکومتی اداروں کے ہاتھوں لاپتہ کئے گئے فٹبالر شعیب سر پرہ، مشتاق، ابوبکر اور غلام رسول کی بازیابی کے لئے خواتین وبچے کئی دنوں سے سراپا احتجاج ہے لیکن حکومت ان کے لواحقین کو ان کے پیاروں سے خیرت کے حوالے سے معلوم فراہم نہیں کر رہا جو پرامن احتجاج کرنے والوں کے ساتھ نا انصافی ہے یہ آئین، قانون اور انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزی ہے عدلیہ اور حکومت کی آئینی ذمہ داری ہے کہ وہ خواتین اور بچوں کے احتجاج کا نوٹس لے اور ان کے خیرت کے حوالے سے لواحقین کو آگاہ کریں اگر ان پر کوئی الزام ہے تو عدالت میں پیش کیا جائے اور ان کی بازیابی کے لئے ہر فورم پر آواز اٹھائیں گے

fc-balochistan تربت: قابض پاکستانی فورسز کا موبائل فون کی دکان پہ چھاپہ

Image
تربت  قابض پاکستانی فورسز  کا موبائل کی دکان پر چھاپہ، دکاندار سمیت چار افراد گرفتار، میرانی ڈیم روڈ سے ایک شخص کو گاڈی سے اتار کر لیجایاگیا۔ گزشتہ روز بھی چھ افراد گرفتار کرلیئے تھے۔ قابض پاکستانی فورسز نے پیر کے روز تربت میں موبائل سیل فون کی ایک دکان پر چھاپہ مارا اور راشد نامی دکاندار سمیت چار افراد گرفتار کرلیئے۔گزشتہ روز بھی اقبال مارکیٹ میں ایف سی اہلکار پر حملہ کے بعد چھ افراد کو گرفتار کرنے کی اطلاعات ملی ہیں۔ اطلاع کے مطابق میرانی ڈیم روڈ سے تربت آتے ہوئے مسافر وین سے محمد افضل ولد محمد عمر سکنہ دشت کو گاڈی سے اتار کر لیجاگیا جس کی وجہ معلوم نہ ہوسکی۔ ذرائع کے مطابق محمد افضل کے تین بھائی گوکدان میں چھاپہ کے دوران کئی مہینے پہلے گرفتار کرلیئے گئے تھے جن میں سے ایک کو بعد میں رہا کردیاگیا تھا۔

مشکے میں مسلح افراد کی فائرنگ سے ایک شخص ہلاک

Image
کوئٹہ  آواران کے علاقے میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے ایک شخص ہلاک  ہوگیا۔ تفصیلات کے مطابق پیر کو آواران کے علاقے مشکے میں نامعلوم مسلح  افراد نے فائرنگ کرکے ڈاکٹر محمد حسن نامی ایک کو ہلاک کردیا۔ لیویز نے نعش  قبضے میں لیکر ہسپتال پہنچاکر ضروری کارروائی کے بعد ورثاء کے حوالے کردی

ڈیرہ بگٹی میں گھر میں گھس کر فائرنگ سے ،باپ ہلاک ،بیٹا زخمی

Image
کوئٹہ/  ڈیرہ بگٹی بلوچستان کے علاقے ڈیرہ بگٹی میں نامعلوم افراد کی  گھر پر فائرنگ سے ایک شخص ہلاک، اسکا بیٹا زخمی ہوگیا۔ تفصیلات کے مطابق  گزشتہ روز ڈیرہ بگٹی کے علاقے سنگسیلہ میں نامعلوم مسلح افراد نے گھر میں  گھس کر اندھا دھند فائرنگ کر دی جس کے نتیجے میں بنگو پیر بگٹی موقع پرہلاک  جبکہ اس کا بیٹا ہوران شدید زخمی ہو گیا۔مقامی انتظامیہ نے لاش اور زخمی  کو ہسپتال پہنچا دیاجو ضروری کا رروائی کے بعد ورثاء کے حوالے کر دی  گئی۔حملے کی وجہ معلوم نہیں ہو سکی۔

پنجگور: عرب شیخ کے قافلے پہ حملہ

Image
نجگور بلوچستان کے ضلع پنجگور میں عرب شیخ پر مسلح افراد کا حملہ گاڑی کو نقصان کوئی جانی نقصان نہیں ہوئی،تفصیلا ت کے مطابق ڈپٹی کمشنر پنجگور حبیب الرحمن کا کہناہے کہ عرب  کے شاہی خاندان شیخ سیف بن محمد النیاں تحصیل کچگ لوڈی فراری کے مقام پر شکار کے سلسلے میں انکا قافلہ گزر رہاتھا کہ نامعلوم پانچ مسلح موٹر سائیکل سواروں نے انکی گاڑیوں پر فائرنگ کردی جس کے نتیجے میں ایک گاڑی کے انجن،لیٹری وٹائروں پر چار گولیا لگی لیکن کو ئی جانی نقصان نہیں ہوا سیکورٹی پے موجود سیکورٹی فورسسز و لیویز کے جوابی فائرنگ سے حملہ آوار فرار ہونے میں کامیاب ہوئے

ڈیرہ بگٹی میں آپریشن ، درجنوں گھر نذر آتش ، 4افراد حراست بعد لاپتہ

Image
ڈیرہ بگٹی کے علاقے پیرکوہ میں پاکستانی فوج کا  آپریشن،درجنوں گھر نذر آتش ،4افراد حراست بعد لاپتہ۔ تفصیلات کے مطابق  پاکستانی فوج نے آج بروز پیر کو ڈیرہ بگٹی کے علاقے پیرکوہ اور گردونواح کے  علاقوں جن میں پاتر، ہن، بوبی اور کنڈور شامل ہیں میں فوجی آپریشن کرکے  دودرجن گھروں کو نذر آتش کردیا جو جل خاکستر ہوگئے جبکہ چار افراد کو اپنے  ساتھ لے گئے ہیں جنکی شناخت نہ ہوسکی اور وہ تاحال لاپتہ ہیں۔آخری اطلاعات  تک فورسز ان علاقوں میں موجود تھی اور آپریشن کا سلسلہ جاری تھا۔