لاپتہ بلوچ اسیران وشہداء کے بھوک ہڑتالی کیمپ کو2507 دن بیت گئے

کوئٹہ لاپتہ بلوچ اسیران وشہداء کے بھوک ہڑتالی کیمپ کو2507 دن ہو گئے اظہار یکجہتی کرنے والوں میں مند سے بی این ایم کا ایک وفد لاپتہ بلوچ اسیران وشہداء کے لواحقین سے اظہار یکجہتی کی اور انہوں نے کہا کہ حکمران یہ بات برداشت کرنے کیلئے قطعاً تیار نہیں ہیں بلوچ قومی تحریک سے جوڑی جمہوری قوتیں تحریک کے مقصد کو لے کر بلوچ عوام کے پاس جائیں انہیں اسی طور پر منظم ومتحرک کر کے قومی تحریک کیلئے ان کی مانگ کو جمہوری ذرائع سے دنیا کے سامنے لائیں وائس فار بلوچ مسنگ پرسنز کے وائس چیئرمین ماما قدیر بلوچ نے وفد سے کہا کہ گوادر تلار میں4 لاپتہ بلوچ فر زندوں کی لا شیں پھینکی گئی ہیں یہ وائس فار بلوچ مسنگ پرسنز کے لسٹ میں ان کا نام درج ہے جنہیں مختلف جگہوں اور مختلف تاریخوں میں لاپتہ کیا تھا فورسز کے ہا تھوں بلوچ قوم کی نسل کشی بدستور جاری ہے ماما قدیر بلوچ نے اس لئے حکمران بلوچ تحریک کو موجودہ ابھار کے آغاز بھی تحریک سے جڑی جمہوری قو توں کو دہشتگردی کے ذریعے کچلنے اور ان کی آواز کو دبانے کی پالیسی پر عمل پیرا ہیں چونکہ بلوچ قومی تحریک کی جمہوری محاذ پر سرگرم جماعتوں میں زیادہ نمایاں اور متحرک ہے۔ 

Comments

Popular posts from this blog

میں اسلم کے عہد میں جی رہا ہوں تحریر : مجیدبریگیڈ سلمان حمل