سردار اختر جان مینگل نے شاہ نورانی میں بم دھماکےکی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے



کوئٹہ  بلوچستان نیشنل پارٹی کے قائد سردار اختر جان مینگل نے شاہ نورانی میں بم دھماکے کے بڑے واقعے اور اس کی وجہ سے بڑی تعداد میں انسانی جانوں کے زیاں اور زخمی ہونے کے واقعے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے- انہوں نے اس واقعے کو افسوسناک قرار دیتے ہوئے کہا کہ تواتر کے ساتھ بلوچستان میں یہ تیسرا بڑا واقعہ ہے جس میں سینکڑوں بے گناہ انسانوں کی شہادت ہوئی ہے- بلوچستان کے فرزندوں ں کے ساتھ خون کی ہولی کھیلی جاری ہے لیکن حکمران ہیں جو اب بھی بلند و بالا دعوے کرتے ہوئے نہیں تھکتے- تیسرے بڑے واقعے کے بعد یہ واضح ہوگیا ہے کہ بلوچستان میں حکومت نام کی کوئی چیز نہیں اور جو دعوے ہیں وہ من گھڑت اور جھوٹ پر مبنی ثابت ہوئے-

انہوں نے کہا کہ بلوچستان میں بے دردی سے انسانوں کے قتل و غارت گری کا بازار گرم ہے- حکمران صرف لفاظی تک ہی محدود ہیں- اگر 8 اگست کے سانحے کے بعد اقدامات کئے جاتے تو پی ٹی سی اور شاہ نورانی درگاہ جیسے واقعات رونما نہیں ہوتے-

انہوں نے کہاکہ انتنا بڑا واقعہ پیش ہونے کے باوجود بروقت امدادی کارروائی نہ کرنا اور سینکڑوں لوگ جو زخمی بیں وہ بے یار و مددگار، موت وزندگی کی کشمکش میں مبتلا ہیں- اس سے قبل بھی بارہا کہ چکے ہیں کہ بلوچستان میں عوام کو صحت کی بنیادی سہولیات تک میسر نہیں- ترقی و خوشحالی کے دعوے تو کئے جاتے ہیں لیکن آج صحت کی سہولیات کے فقدان اور انسانی جانوں کو محفوظ رکھنے کیلئے بروقت امداد کی فراہمی بھی محال بن چکی ہے-

انہوں نے کہا کہ اس واقعے کے بعد حکمران اخلاقی طور پر اب کبھی بھی یہ دعویٰ نہ کریں کہ بلوچستان میں امن وامان ہے، پہلے تو محدود انداز میں ایک دو لاشیں گرتی تھیں لیکن اب تو سینکڑوں کی تعداد میں لوگوں کو بے دردی کے ساتھ نشانہ بنایا جا رہا ہے اور زیادہ لوگوں کی شہادت کے واقعات بھی سامنے آرہے ہیں-

انہوں نے اپنے بیان میں اس واقعے کی بھر پور انداز میں میں مذمت کی اورایسے واقعات کو حکمرانوں کی ناکامی سے تعبیر کیا۔ اس واقعے میں شہید ہونے والوں کے لواحقین کے ساتھ دلی ہمدردی کا اظہار کیا اور اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ فوری طور پر لوگوں کو طبی امداد کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے اور ان کے علاج معالجہ کی سہولیات فراہم کی جائیں- حکمران دعوئے کرنے کی بجائے اگر امن وامان کے حوالے سے عملی اقدامات اٹھاتے تو حالات آج اس نہج تک نہ پہنچتے- آج بلوچستان کے عوام ماتم اور ذہنی تناؤ کا شکار ہیں اور حکومت غیور عوام کی جان ومال کے تحفظ میں مکمل طور ناکامی ہوچکی ہے۔

Comments

Popular posts from this blog

میں اسلم کے عہد میں جی رہا ہوں تحریر : مجیدبریگیڈ سلمان حمل