چین پاکستان اکنامک کوریڈور پر قائم اہم پُل کو دھماکے سے تباہ کرنے کی ذمہ داری قبول کرتے ہیں،بی ایل ایف



کوئٹہ  بلوچستان لبریشن فرنٹ کے ترجمان گہرام بلوچ نے نامعلوم مقام سے  

سیٹلائٹ فون کے ذریعے کہا کہ بدھ کے روز ضلع کیچ کے علاقے دشت سنگئی میں  چین پاکستان اکنامک کوریڈور (سی پیک) پر قائم پُل کو دھماکہ خیر مواد سے  اُڑا کر تباہ کر دیا۔ اسی دوران پل پر سے جاتی ہوئی ایک ڈمپر گاڑی بھی  دھماکہ کی زد میں آکر ناکارہ ہوا ہے۔ یہ گاڑی عسکری تعمیراتی کمپنی ایف  ڈبلیو او کی تھی۔ یہ پُل قابض پاکستان کی چین کے ساتھ نام نہاد ترقی اور  چین پاکستان اکنامک کوریڈور (سی پیک ) کا حصہ ہے۔ بلوچ قوم کی مرضی و منشا  کے بغیر کوئی منصوبہ قابل قبول نہیں اور اِن پر حملے جاری رہیں گے۔ اِن  منصوبوں کے سامنے رکاوٹ بلوچ قوم پر پاکستانی فوج روزانہ کی بنیاد  پرآپریشنوں میں مصروف ہے۔ ایک مہینے سے جاری کیچ کے علاقے دشت میں فوجی  آپریشن میں ایک سو سے زائد نہتے بلوچوں کو لاپتہ کیا گیا ہے۔ اِن آپریشنوں  کا مقصد بلوچ قوم کو نقل مکانی پر مجبور کر نا ہے، تاکہ پاکستان آسانی سے  اپنی استحصالی منصوبوں کو پایہ تکمیل تک پہنچائے۔ فوجی آپریشن و بمباری سے  پہلے ہی کئی ہزار گھرانے بے گھر ہوکر بلوچستان کے مختلف حصوں میں در بدر ہو  کر کسمپرسی کی زندگی گزار رہے ہیں ، جو تمام بین الاقوامی قوانین کے منافی  ہیں ۔گہرام بلوچ نے کہا کہ آج ہی جھاؤ کے علاقے گزی میں پاکستانی فوج کے  قافلے کی پکٹ سیکورٹی پر اسنائپر حملہ کرکے ایک اہلکار کو ہلاک کیا۔ کل رات  بسیمہ کے علاقے راغے میں ریاستی مخبر اور ریاستی حمایت یافتہ مذہبی شدت  پسند تنظیم مسلح دفاع کے کارندے کمال خان کو فائرنگ کرکے ہلاک کیا۔ وہ  بلوچوں کی مخبری، آپریشن اور اغوا و قتل میں پاکستانی فوج کا ہمنوا تھا۔  بدھ کے روز آواران کے علاقے بزداد میں آرمی کیمپ پر خود کار ہتھیاروں سے  حملہ کر کے چوکی پہ موجود تین اہلکاروں کو ہلاک کیا ہے، یہ کارروائیاں  بلوچستان کی آزادی تک جاری رہیں گے۔

Comments

Popular posts from this blog

میں اسلم کے عہد میں جی رہا ہوں تحریر : مجیدبریگیڈ سلمان حمل