خاران  حملے کی ذمہ داری قبول ،شہید قمر الدین کی کارکردگی کو ہمیشہ یاد رکھا  جائے گا ، بی ایل اے




کوئٹہ   بلوچ لبریشن آرمی کے ترجمان جئیند بلوچ نے کہا ہے کہ  شہیدقمرالدین بلوچ عرف ڈاکٹر جو 10 اکتوبرکو ناگاہو سے اپنے آبائی شہر  اسپلنجی جارہے تھے کہ روبدار کے مقام پر فورسزکے مقامی ڈیتھ سکواڈ کے  اہلکاروں نے فائرنگ کرکے شہید کردیا شہید قمرالدین عرف ڈاکٹر 2009 سے تحریک  آزادی سے وابسطہ تھے جو قلات، اسپلنجی، بولان، جوہان اور ناگاہو سمیت  مختلف علاقوں میں تنظیمی سرگرمیوں میں حصہ لیتے رہے ۔انکی کارکردگی کو  ہمیشہ یاد رکھا جائے گا ۔ ترجمان نے کہاکہ اس دوران جب ریاست اور اسکے  مقامی گماشتے بلوچ نواجوانوں کو تحریک سے بدزن کرنے اور مسلح مزاحمت سے  نکلنے کے لئے مختلف دباو ڈالتے رہے اسکے باوجود شہید قمرالدین بلوچ کی  تحریک کے ساتھ ثابت قدمی سے وابستگی اور اپنے موقف پر مظبوطی سے ڈٹے رہنا  بلوچ نوجوانوں کے لئے مشعل راہ ہے اور اس بات کا واضح ثبوت ہے کہ بلوچ  نوجوان بلوچستان کی آزادی تک میدان جنگ میں دشمن کے آگے سر خم کرنے کے  بجائے شہادت کو ترجیح دیں گے۔ ترجمان نے مزید کہا کہ آج بلوچ سرمچاروں نے  خاران شہر میں نادرا دفتر کے قریب فورسز کی گاڑی پر دستی بم سے حملہ کیا  اوراہلکاروں پرفائرنگ بھی کی جس میں فورسز کو جانی نقصان کا سامنا کرنا پڑا  اس حملے کی ذمہ داری بی ایل اے قبول کرتی ہے ہماری اسطرح کی کاروائیاں  جاری رہیں گی

Comments

Popular posts from this blog

میں اسلم کے عہد میں جی رہا ہوں تحریر : مجیدبریگیڈ سلمان حمل