خضدار: درگاہ شاہ نورانی میں دھماکا، 30 افراد ہلاک،70زخمی - See more at: http://dailysangar.com/home/page/3370.html#sthash.euxPjwWG.dpuf
خضدار: درگاہ شاہ نورانی میں دھماکا، 30 افراد ہلاک،70زخمی - See more at: http://dailysangar.com/home/page/3370.html#sthash.euxPjwWG.dpuf
خضدار: درگاہ شاہ نورانی میں دھماکا، 30 افراد ہلاک،70زخمی - See more at: http://dailysangar.com/home/page/3370.html#sthash.euxPjwWG.dpuf
خضدار: درگاہ شاہ نورانی میں دھماکا، 30 افراد ہلاک،70زخمی - See more at: http://dailysangar.com/home/page/3370.html#sthash.euxPjwWG.dpuf

 خضدار:  درگاہ شاہ نورانی میں دھماکا، 52 افراد ہلاک،110زخمی

خضدار: درگاہ شاہ نورانی میں دھماکا، 30 افراد ہلاک،70زخمی - See more at: http://dailysangar.com/home/page/3370.html#sthash.euxPjwWG.dpufخضدار:  درگاہ شاہ نورانی میں دھماکا، 30 افراد ہلاک،70زخمی
خضدار: درگاہ شاہ نورانی میں دھماکا، 30 افراد ہلاک،70زخمی - See more at: http://dailysangar.com/home/page/3370.html#sthash.euxPjwWG.dpuf
 

خضدار بلوچستان کے علاقے ضلع خضدار میں درگاہ شاہ نورانی میں زور دار  دھماکے کے نتیجے میں 52 افراد ہلاک اور 110 سے زائد افراد زخمی  ہوگئے۔ابتدائی معلومات کے مطابق دھماکے میں ہلاک اور زخمی ہونے والوں میں  بڑی تعداد خواتین اور بچوں کی ہے۔مذکورہ علاقہ حب شہر سے 100 کلومیٹر سے  زائد فاصلے پر قائم ہے اور راستہ انتہائی خراب ہے جبکہ قریب میں ریسکیو کی  سہولیات بھی موجود نہیں ہیں۔میڈیا رپورٹوں کے مطابق درگاہ شاہ نورانی میں  ہفتے کے روز شام گئے دھمال کا آغاز ہوتا ہے جس میں سیکڑوں افراد شرکت کرتے  ہیں اور دھماکا اسی مقام پر ہوا ہے جہاں دھمال جاری تھا۔تحصیلدار جاوید  اقبال کے مطابق دھماکا مغرب سے 10 منٹ پہلے ہوا اور اس وقت سیکڑوں زائرین  یہاں موجود تھے۔ان کا کہنا تھا کہ دھماکے میں متعدد خواتین اور بچوں سمیت  52 افراد ہلاک ہوئے ہیں جبکہ ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ بھی ہے۔تحصیلدار نے  دھماکے کی جگہ پر ریسکیو کو طلب کرلیا ہے۔تحصیلدار کا کہنا تھا کہ واقعے  کے دیگر 110 زخمیوں کو لیویز کی گاڑیوں میں حب اور کراچی کے ہسپتالوں میں  منتقل کیا جارہا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ دھماکے کی نوعیت کا ابھی تعین نہیں  ہوسکا، ہفتے اور اتوار کو ملک بھر سے زائرین درگاہ آتے ہیں۔ایک سوال کے  جواب میں ان کا کہنا تھا کہ ابھی تک کوئی امداد نہیں پہنچی اور ہم اپنی مدد  آپ کے تحت کام کررہے ہیں۔انھوں نے جلد از جلد ایمبولینس درگاہ شاہ نورانی  بھیجنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ امدادی کاموں کیلئے گاڑیاں اور  ایمبولینس درکار ہیں۔ترجمان بلوچستان حکومت انوار الحق کاکڑ نے دھماکے میں  20 افراد کی ہلاکت کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ ضلعی انتظامیہ امدادی کاموں  کی نگرانی کررہی ہے،انھوں نے کہا کہ حالت جنگ میں ایسے نقصانات اٹھانا  پڑتے ہیں اور دعویٰ کیا کہ دہشت گردی پر بہت جلد قابو پالیں گے۔بعد ازاں  ترجمان بلوچستان حکومت انوار الحق کاکٹر نے سماجی رابطے کی سائٹ ٹوئٹر پر  اپنے ٹوئٹ میں کہا کہ دشمن مایوسی کا شکار ہیں اور خواتین اور بچوں پر حملے  کررہے ہیں۔انھوں نے درگاہ شاہ نورانی میں ہونے والے دھماکے کو بلوچستان  اور اقتصادی راہداری پر حملہ قرار دیا۔ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم دھماکے کی  پْرزور مذمت کرتے ہیں۔بلوچستان کے وزیر داخلہ سرفراز بگٹی نے ڈان نیوز سے  بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ واقعے میں ہلاکتوں کی تعداد بڑھنے کا خدشہ ہے۔ایک  سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ پورے صوبے کی سیکیورٹی کو انتہائی سخت  کیا گیا تھا، غفلت کے مرتکب افراد کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔ان کا مزید  کہنا تھا کہ رات کی تاریکی اور پہاڑی علاقہ ہونے کی وجہ سے یہاں ریسکیو  کیلئے ہیلی کاپٹر کو نہیں بھیجا جاسکتا۔دوسری جانب وزیراعظم نواز شریف نے  درگاہ شاہ نورانی میں ہونے والے دھماکے کے زخمیوں کو بہترین طبی سہولیات  فراہم کرنے کی ہدایات جری کی ہیں۔ادھر درگاہ شاہ نورانی میں ہونے والے  دھماکے کی شدید مذمت کرتے ہوئے وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کراچی کے  ہسپتالوں میں ایمرجنسی کا اعلان کردیا ہے اور زخمیوں کو ہسپتالوں میں طبی  سہولیات فراہم کرنے کی ہدایت جاری کردی ہیں۔وزیراعلیٰ سندھ نے دھماکے میں  جانی نقصان پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ دھماکا کرنے والا مسلمان  نہیں ہوسکتا، ہمیں دہشت گردوں کے خلاف مل کر لڑنا ہے۔


Comments

Popular posts from this blog

میں اسلم کے عہد میں جی رہا ہوں تحریر : مجیدبریگیڈ سلمان حمل